Gallery


Latest topics
»  The White-Black Color Match
Mon Jun 16, 2014 11:11 am by cocosoup1102

» Windows 7 Themes New Collection (Icons Gadgets) [September Update Link]
Sun Jun 08, 2014 12:26 pm by drewal

» Pagal Wot.com
Sun Jun 08, 2014 10:46 am by drewal

» Nutrimind 2012 Torrent
Sat Jun 07, 2014 11:01 am by drewal

» RarLab WinRAR V3.90 Cracked-EAT
Fri Jun 06, 2014 8:58 am by drewal

» Topaz ReMask V3.1.0 Incl Keymaker-CORE
Fri May 30, 2014 3:17 pm by drewal

» Painkiller Redemption Repack [tfile.ru]
Fri May 30, 2014 9:36 am by drewal

» Pretty Database Explorer 1.4.0.123 - Connect To Various Databases
Thu May 29, 2014 10:25 pm by drewal

» Topaz ReMask V3.1.0 Incl Keymaker-CORE
Thu May 29, 2014 9:16 pm by drewal

» 3D PageFlip For PowerPoint V1.0.0 Portable{worldend}{h33t}
Tue May 27, 2014 2:14 pm by drewal

Search
 
 

Display results as :
 


Rechercher Advanced Search

Social bookmarking

Social bookmarking Digg  Social bookmarking Delicious  Social bookmarking Reddit  Social bookmarking Stumbleupon  Social bookmarking Slashdot  Social bookmarking Yahoo  Social bookmarking Google  Social bookmarking Blinklist  Social bookmarking Blogmarks  Social bookmarking Technorati  

Bookmark and Share

Bookmark and share the address of Pakistan Online News, Education and Entertainment forum. Pak Book on your social bookmarking website

RSS feeds


Yahoo! 
MSN 
AOL 
Netvibes 
Bloglines 



your five minutes please

View previous topic View next topic Go down

your five minutes please

Post  NY on Wed May 13, 2009 10:59 am


آج کا دور
globolisation
کا دور ہے۔ دنیا رسل و وسائل کی ترقی کی وجہ سے ایک بڑے گاﺅں کی شکل اختیار کرچکی ہے۔ سیاسی طور پر بھی یہاں صرف ایک ہی چودہری رہ گیا ہے (امریکہ) ۔ میڈیا کے ذریعے بھی برائی دنیا کے کونے کونے پر پہنچائی جارہی ہے۔ 1950ءمیں تھیٹر ہوتے تھے جہاں شرفاءچوری چھپے جاتے تھے۔ 2000 ء میں ہر گھر بظاہر خود تھیٹر اور سنیما ہاﺅس بن چکا ہے۔ ایسا کس طرح ہوا اس کا مختصراً جائزہ لیتے ہیں ، اور یہ جائز اس دور کا ہے، جو آج کا دور ہے، جو ٹیکنالوجی کا دور کہا جاتا ہے لیکن دراصل اس میں معاشرت پر بہت ہی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

جب یورپ نے کلیسا کے خلاف آواز بلند کی اور بقول ان کے اپنے آپ کو
dark ages
سے آزاد کرنے کی کوشش کی۔

چونکہ کلیسا مذہب کا علمبردار تھا تو مذہب کے خلاف ان تحریکات نے عقل کو فریق بنایا۔ان تحریکات سے معاشرے پر مندرجہ ذیل نتائج مرتب ہوئے:

مذہب فرد کا نجی مسئلہ ہے۔ اسے اجتماعی زندگی سے کلیتاً نکال دیا گیا (secularism)

فرد مکمل طور پر خود مختار ہے اور خدا کا وجود اس کے اپنے انفرادی عقیدہ کے مطابق ہے(humanism)

دنیا کے کامیابی اصل ہدف ہے اس طرح آخرت بے معنی ہوگئی (materialism)

عقل، حرص ، تجربہ اور مشاہدہ، حق و باطل کا معیار قرار پائے (imperialism)

عورت کا مکمل آزادی دے کر عریانی اور فحاشی کو رواج دیا جس سے خاندان کا ادارہ ڈھ گیا(liberalism)

جنس
(sex)
انسان میں سب سے تیز قوت ہے اور اس کی تسکین ہوتی رہے تو انسان کی ذہنی صحت برقرار رہتی ہے تو جنسی تسکین کے لئے اخلاقی اور غیر اخلاقی کوئی بھی طریقہ اختیا ر کیا جاسکتا ہے
(friedism)

انسان آدم و حوا سے نہیں بلکہ بندر کی بہتر شکل ہے (darwinism)

سیاسی طور پر انسان خود مختار اور آزاد ہے اس لئے ایک فرد ایک ووٹ کا استعمال democracy)
جو قانون دل چاہے بنائے جو اکثریت منظور کرلے۔ (soverignity of people. popular soverignity) (عوام کی حاکمیت)

دنیا کی زندگی سب کچھ ہے جیسے چاہو کھاﺅ جیسے چاہو جیﺅ کا نعرہ بلند ہوا (man is a pleasure seeking animal)

NY

Posts : 103
Points : 312
Join date : 2009-05-07
Age : 35
Location : Karachi

Members info
Say 3 word for Pakistan.:

View user profile

Back to top Go down

View previous topic View next topic Back to top


 
Permissions in this forum:
You cannot reply to topics in this forum